Contact Us

info@jamiat.org.in

Phone: +91-11 23311455, 23317729, Fax: +91 11 23316173

Address: Jamiat Ulama-i-Hind

No. 1, Bahadur Shah Zafar Marg, New Delhi – 110002 INDIA

Donate Us

JAMIAT ULAMA-I-HIND

A/C No. 430010100148641

Axis Bank Ltd.,  C.R. Park Branch

IFS Code - UTIB0000430

JAMIAT RELIEF FUND

A/C No. 915010008734095

Axis Bank Ltd.  C.R. Park Branch

IFS Code-UTIB0000430

پاپولر فرنٹ آف انڈیا پر پابندی سے متعلق جمعیۃ علماء ہند کی رائے

March 6, 2018

 

 

 

نئی دہلی 6مارچ  
جمعیۃ علماء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی نے جھارکھنڈ میں پاپولر فرنٹ آف انڈیا پر عائد کردہ پابندی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کا الزام کوئی مذاق نہیں ہے ،اس کے خلاف لڑائی پورے ملک کی مشترک لڑائی ہے ، اس لیے سرکاروں کا فرض بنتا ہے کہ وہ دہشت گردی کے معاملے میں پوری سنجیدگی اختیار کریں اور اس کے خلاف سخت سے سخت اقدام سے ہرگز گریز نہ کریں ، لیکن ایسا ہرگز کوئی قدم نہ اٹھایا جائے جس سے کسی خاص فرقے کے خلاف امتیازی یا انتقامی عمل کا تاثر قائم ہو ، ورنہ اس سے کمزور طبقات میں مظلومیت اور وکٹم ہڈ (victimhood)کا احساس پیدا ہو گا ۔


مولانا مدنی نے کہا کہ ریاست جھارکھنڈ میں گائے کے تحفظ کے نام پر ہجومی تشدد کے سب سے زیادہ واقعات رونما ہوئے ہیں ، اس کے علاوہ اکثریتی طبقہ سے تعلق رکھنے والی بہت ساری ایسی انجمنیں ہیں جو بھڑکاؤ اور نفرت پر مبنی بیانات دیتی رہتی ہیں، لیکن رگھوبرداس کی سرکار نے ان کے خلاف کوئی ٹھوس کارروائی نہیں کی ہے جب کہ بلا کسی ثبوت ایک سماجی اور فلاحی تنظیم کو دہشت گردوں کے کٹہرے میں کھڑا کردیا گیا ۔ مولانا مدنی نے سوال کیا کہ عوام کو معلوم ہو نا چاہیے اس اقدام کی کیا کوئی ٹھوس بنیاد ہے ورنہ اس طرح پابندی عائد کرنا یقیناًغیر جمہوری ، غیر دستوری اور غیر قانونی اقدام ہے ۔مزید برآں اس سے سرکار کی نیت اور انصاف پسندی پر بجا طور پر سوالیہ نشان لگتاہے۔
 

Share on Facebook
Share on Twitter
Please reload

Recent Posts

August 9, 2017

Please reload

Follow Us
  • Jamiat Ulama-i-Hind JUH
  • Jamiat Ulama-i-Hind JUH