Contact Us

info@jamiat.org.in

Phone: +91-11 23311455, 23317729, Fax: +91 11 23316173

Address: Jamiat Ulama-i-Hind

No. 1, Bahadur Shah Zafar Marg, New Delhi – 110002 INDIA

Donate Us

JAMIAT ULAMA-I-HIND

A/C No. 430010100148641

Axis Bank Ltd.,  C.R. Park Branch

IFS Code - UTIB0000430

JAMIAT RELIEF FUND

A/C No. 915010008734095

Axis Bank Ltd.  C.R. Park Branch

IFS Code-UTIB0000430

بسلسلہ صد سالہ تقریب :مولانا حبیب الرحمن اعظمی کی حیات و خدمات پر بنارس میں سیمینار

February 25, 2019

 

 

 

 

 

 


نئی دہلی ۔۱۵؍ فروری۲۰۱۹ ء ( بحوالہ حافظ رضوان ابن مولانا قاسم قاسمی )
آج بنارس کی تاریخی سرزمین پر جمعیۃ علماء ہند کی صدسالہ تقریبات کے سلسلے میں ہندوستان کی عظیم المرتبت شخصیت اور بلند پایہ عالم دین محدث جلیل حضرت مولانا حبیب الرحمن صاحب اعظمیؒ کی شخصیت اور علمی خدمات کے تعارف اور ان کے کارناموں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے نانوپور،سارناتھ کے آربی پیلیس میں عظیم الشان سیمنار کا انعقاد ہوا. چونکہ جمعیۃ علماء ہند کے قیام کو سو سال پورے ہو چکے ہیں، جس کے تعلق سے جمعیۃ علماء نے پروگراموں کا ایک طویل سلسلہ شروع کیا ہے جس سلسلے کی ایک اہم کڑی آج کا یہ سیمینار ہے جس کا آغاز قاری سراج الدین صاحب استاذ جامعہ مظہر العلوم بنارس کی تلاوت کلام پاک سے ہوا اور حضرت محدث الاعظمی کی لکھی ہوئی نعت سے بارگاہ رسالت میں نذرانہ عقیدت پیش کیا گیا۔ مولانا محمد قاسم صاحب قاسمی استاذ جامعہ اسلامیہ بنارس نے ترانہ جمعیۃ پڑھا۔حضرت مولانا مفتی عبدالباطن صاحب نعمانی امام و خطیب جامع مسجد گیان واپی و مفتی شہر بنارس نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا جس میں بنارس کی تاریخی سرزمین پر ہونے والے اس سیمینارپر اظہار تشکر کیا اور حضرت محدث الاعظمیؒ کے بنارس سے دیرینہ اور مضبوط تعلقات کا ذکر کیا۔سیمینار کی پہلی نشست کی صدارت مولانا الاعظمیؒ کے فرزند مولانا رشید احمد اعظمی نے کی اور دوسری نشست کی صدارت صدر جمعےۃ علماء ہند مولانا قاری محمد عثمان منصورپوری صاحب نے کی-

صدر جمعیۃ علماء ہند نے خطبہ افتتاحیہ پیش کرتے ہوئے جنگ آزادی میں جمعیۃ علماء ہند کے کردار،ملک و قوم کے لئے اس کی دیرینہ خدمات اور اس کے اکابرین کی قربانیوں کا تذکرہ کیا۔مولانا حبیب الرحمن محدث الاعظمیؒ کی شخصیت اور حالات پر روشنی ڈالتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جمعیۃ علماء ہند سے وابستہ شخصیات میں حضرت محدث الاعظمی کی شخصیت اپنے علم و معرفت اور فضل و کمال کے لحاظ سے ممتاز ہے۔وہ ملک و ملت کی قیادت میں صف اول کے لوگوں میں تھے۔ وہ صرف ہندوستان ہی میں نہیں بلکہ پوری اسلامی دنیا میں اپنے علمی و تحقیقی کارناموں کی وجہ سے مشہور و مقبول تھے۔آپ کا شمار برصغیر کے خادمان علم حدیث کی فہرست میں اول نمبر پر تھا۔ انھوں نے جو علمی و تحقیقی کارنامے انجام دیے وہ سرزمین ہند کے لیے باعث افتخار ہے ۔مولانا متین الحق اسامہ قاسمی صدر جمعیۃ علماء اترپردیش نے مولانا الاعظمی کے علمی کارناموں کے ساتھ ساتھ ان کی ملی و سماجی خدمات کا تعارف کرایا۔مولانا ظفر احمد صدیقی پروفیسر علی گڑھ مسلم یونیورسٹی نے بھی مولانا کے علمی کارناموں کا ذکر کیا۔


اخیر میں حضرت ناظم عمومی جمعیۃ مولانا محمود اسعد مدنی صاحب کا تفصیلی خطاب ہوا جس میں انھوں نے ملک کے موجودہ حالات حاضرہ پر تفصیلی بیان فرمایا۔ مولانا نے فرمایا کہ ہم ان کے نام لیوا ہیں جنہوں نے مذہب کے نام پر ملک کی تقسیم کی مخالفت کی تھی اور ہم نے اپنی مرضی سے اس ملک میں رہنا پسند کیا ہے جس کے لئے ہمیں کسی سے سرٹیفکیٹ لینے کی ضرورت نہیں ہے۔بدقسمتی سے ہمارے قوم پچھلے ستر سالوں سے اپنی صفائی دیتی چلی آرہی ہے۔مولانا نے پلوامہ حملہ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس حملہ کی مذمت کرتے ہیں اور پورا ملک اپنے ان بہادر جوانوں کے ساتھ کھڑا ہے۔مولانا نے زور دے کر اس بات کو کہا کہ جس طرح سے کشمیر ہمارا ہے اسی طر ح سے کشمیری بھی ہمارے ہیں۔کشمیر کو کشمیریوں سے کوئی بھی الگ نہیں کر سکتا. ناظم سیمینار مولانا ابو مسعود صاحب نے آنے والے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا اور حضرت صدر محترم کی دعا پر سیمینار کا اختتام ہوا۔

Share on Facebook
Share on Twitter
Please reload

Recent Posts

August 9, 2017

Please reload

Follow Us
  • Jamiat Ulama-i-Hind JUH
  • Jamiat Ulama-i-Hind JUH